ہنزہ(سید اسد اللہ غازی ) کریم آبادکے ہون پہاڑ پر الیک نامی غیر ملکی زخمی پیرا گلیڈر دوران پرواز پیراشوٹ پڑھا توانہوں ایمرجنسی غیر ہموار چوٹی اترنے کاُفیصلہ کیا اسی دوران تیز ہوا کی وجہ سے اپنا توازن کھو بیٹھا اورگر کر انکے ہاتھ اور پاؤں ٹوٹے تو انہوں نے بزریعہ سیٹلائیٹ فون اپنے اہل خانہ سے رابطہ کیا اور انکے اہل خانہ نے کریم آباد میں مقیم ہوٹل مالکان سے ریسکئوکے لیے اپیل کی یوں انکےحادثے کی خبر ملی تو ریکسو 1122اور مقامی رضاکاروں نے ایلک کو ریسکیو کرنے کے لیے کل دن کو چار بجے سے آپریشن شروع کی اور رات بھر جاری آپریشن جاری رہا

مقامی نوجوانوں اپنی مدد آپ کے تحت انتہایی خطرناک پہاڈی پر جا کر زخمی سیاح کوفرسٹ ایڈ فراہم کیا ہے انشاءلله کچھ گھنٹے بعد اس کو نیچے لے کر آیئنگے پانچ ہزار میٹر سے زیادہ بلند پہاڈ پر خراب موسم اور رات کی تاریکی میں اپنی جانوں کے پروا کیے بغیر پچھلے بائیس گھنٹے سے جاری آپریشن میں انسانیت کے خاطر اس پرخطر ریسکیو آپریشن میں حصہ لینے والے مقامی نوجوانوں کی جذبہ خدمت اور انکی ہمت پر بحثیت قوم ہم سب کو فخر ہیں
سلام ہے یوتھ پے

اللّه تتعالیٰ انکو اس کا اجر دے جنہوں نے اپنی جانوں کو داو پر لگا کر پوری قوم کا نام روشن کیا وفاقی اورگلگت بلتستان کے حکومت سے اپیل ہے کہ اپنے مدد آپ کے تحت اس پرخطر آپریشن میں حصہ لینے والے مقامی ہیروز کو قومی عزازات سے نوازیں

دوسری جانب ہنزہ میں پراگلیڈینگ کے لیے آنے والے کھلاڑیوں پے لازم کریں کہ وہ ہنزہ پراگیڈینگ ایسوسیشن کے پلاٹ فارم سے خود کو رجسٹر کریں اور کوئی بھی پیراگلیڈر تنہا گلیڈ نہیں کریں اور تمام ضروری لوازمات کو پورا کرنے پر ہی انہیں این آو سی جاری کریں


ہنزہ غیر ملکی پیرا گلیڈرز جہاں چاہے اڑ جاتے ہیں
خدشہ ہے کہ وہ ہمارے گلیشرز پے مضر کیمیکل ڈالیں
اولتر گلیشر اور ششپر گلیشر میں غیر معمول تبدیلی نے ہمیں سوچنے پر مجبور کیا ہے


ایک غیر ملکی سیاح ہر روز التر میڈو جا یا کرتی تھی جس دن وہ پاکستان سے اپنے ملک روانہ ہوئی اوّلتر گلیشر پھٹ گیا اور تب سے اولتر گلیشر میں پگھلاو کا عمل تیز ہو چکا ہے
سکیورٹی اداروں کو چوکس ہونے کی اشد ضرور ہے

شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں