ڈاکٹر عافیہ صدیقی امریکی قید میں ۔رہاٸی کا مطالبہ امریکی صدر پریشان

 

عافیہ صدیقی کو رہا کرو۔۔۔ امریکا میں ایک شخص نے چرچ میں لوگوں کو یرغمال بنالیا،پھر کیا ہوا؟جوبائیڈن بھی پریشان ہوگئے

 

ٹیکساس (آن لاٸن مومونٹرین ڈیسک )امریکی ریاست ٹیکساس کے شہر کولیویل میں ایک شخص نے یہودی عبادت گاہ میں لوگوں کو یرغمال بنا کر انکی بازیابی کے لیے پاکستانی ساٸنسدان ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی ہاٸی کا مطالبہ پیش کیا ہے ۔ پولیس ایک ایسے شخص کے ساتھ مذاکرات میں مصروف ہے .

 

 

جس نے بظاہر ایک یہودی عبادت گاہ میں کم از کم تین افراد کو یرغمال بنایا ہوا ہے۔ میڈیارپورٹس کے مطابق مطابق پولیس نے اغوا کار شخص کے ساتھ مذاکرات میں ایک مغوی کو بازیاب کرالیا ہے۔ بازیاب ہونے والے شخص کی صحت ٹھیک ہے اور اسے کسی قسم کی طبی امداد کی ضرورت نہیں۔

 

پولیس محمد صدیقی نامی شخص کے ساتھ بات چیت کر رہی ہے جس نے امریکا میں امریکی فوجی اور ایف بی آئی ایجنٹ کے قتل میں ملوث اپنی 85 سالہ قید کے تحت پابند سلاسل بہن عافیہ صدیقی کی رہائی کا مطالبہ کیا ۔

 

 

مزید پڑھیے ۔

فرانس میں ایک رٸیلٹی شو میں دلہنوں کے کنوارپن کی جانچ دکھانے پر فرانسیسی خاتون وزیر برہم اس کے خلاف قانون سازی فراسوسی مسلم خاندانوں کی طرف سے اس ٹسٹ کا زیادہ مطالبہ تھا ۔کنورے پن کے ٹسٹ کرنے والے غیر پیشہ وانہ افراد پر ریپ کیس داٸر ہوگا ۔“

یاد رہے کہ پاکستانی ساٸنسدان ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو سابق ڈیکٹڑ پرویز مشرف نے پاکستان سے گرفتار کر کے قوم کی بیٹی کو امریکی حکام کو فروخت کیا تھا ۔ قوم کی بیٹیوں کا سودا گر پرویز مشرف آج کل دوبٸی میں زلت کی زندگی گزار رہا ہے اور پاکستانی عدالتوں سے مفرور ہے ۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی فیملی نے ان کی رہاٸی کے لیے تمام سفارتی کوشیشں کی ۔

 

 

پاکستانی حکومت کی عدم تعاون کی وجہ سے انکی رہاٸی ممکن نہیں ہوا تو بلآخر انکے حقیقی بھاٸی محمد صدیقی نے انتہاٸی قدم اٹھایا اور یہودی عبادت گاہ میں کم سے کم تین افراد کو ییرغمال بنا کر اپنی بہن کی رہاٸی کے لیے جان پے کھیل کر ایک انتہاٸی قدم اٹھایا اور ثابت کردیا کہ پاکستانی قوم اپنی مان بہن کی عزت اور ناموس میں انتہاٸی قدم اٹھا سکتے ہیں پروز مشرف کی طرح ہر کوٸی بے غیرت نہیں ہوتا ہے ۔ جو قوم کی بیٹیوں کا سودا کریں ۔

 

واٹس ایپ نے ‘فائنل باس موڈ’ کھول دیا اپنے صارفین کی سہولت اور تجربہ کو ہر ممکن حد تک ہموار کرنے کے لیے WhatsApp ، واٹس ایپ نے جمعرات کو اینڈروئیڈ ، آئی او ایس صارفین کے لئے شارٹ کیز تیار کی ہیں۔“

کانگریگیشن بیتھ اسرائیل نامی عبادت گاہ میں جب یہ واقعہ پیش آیا تو یہاں ہونے والی عبادت کو لائیو سٹریم کیا جا رہا تھا۔ تاہم اس لائیو سٹریم فیڈ کو اب ہٹا دیا گیا لیکن ایسا ہونے سے قبل ایک شخص کو اونچی آواز میں یہ کہتے سنا جا سکتا تھا کہ وہ کسی کو نقصان نہیں پہنچانا چاہتا۔

 

 

یہ عبادت گاہ مغربی ڈالاس سے 40 کلومیٹرکے فاصلے پر ہے۔ محمد صدیقی نے تین عبادت گذاروں اور یہودی معبد کے ایک ربی کو بھی یرغمال بنایا۔کولیویل کی پولیس کی جانب سے اب سے کچھ دیر قبل جاری کردہ بیان کے مطابق پانچ بجے کے بعد اس شخص کی جانب سے ایک یرغمالی کو رہا کیا گیا ہے جو صحیح سلامت ہے۔

 

جبکہ ایف بی آئی کے اہلکار تاحال اس شخص سے مذاکرات کرنے میں مصروف ہیں۔پولیس کے مطابق قانون نافذ کرنے والے ادارے اس بات کی تصدیق کر رہے ہیں کہ عبادت گاہ میں اور لوگ بھی موجود ہیں لیکن کسی کو نقصان پہنچنے کے حوالے سےکوئی اطلاع موجود نہیں ہے۔

 

تاحال اس بارے میں وضاحت نہیں ہے کہ یہ شخص مسلح ہے یا نہیں۔خیال رہے کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے کے دو اہلکاروں نے آغاز میں نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا تھا کہ اس وقت عبادت گاہ میں راہب سمیت کم سے کم چار افراد موجود ہیں۔وائٹ ہائو س پریس سیکریٹری جین پساکی نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ صدر جو بائیڈن کو ڈیلاس کے علاقے میں ہونے والے اس واقعے کی بدلتی صورتحال سے آگاہ کیا جا رہا ہے۔

 

 

 

اسرائیل کے وزیرِاعظم نفتالی بینیٹ نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ میں نے کولیویل، ٹیکساس کے کانگریگیشن بیتھ اسرائیل میں یرغمال بنانے کے واقعے کی صورتحال پر نظر رکھی ہوئی ہے۔ ہم یرغمال بنائے گئے افراد اور ان کو ریسکیو کرنے والوں کے تحفظ کے لیے دعاگو ہیں۔یوں اس وقعے پر اسراٸیلی حکومت میں بھی کھبلی مچی ہوٸی ہے۔

شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں