وزیر اعلٰی گلگت بلتستان خالد خورشید

لاھور (بی بی نادیہ ) حکومت گلگت بلتستان صوبے میں فنی تعلیم کے فروغ کیلئے پرائیویٹ سیکٹر کی بھرپور حوصلہ افزائی کرے گی تاکہ عوام کو گھروں کی دہلیز پہ ایسے ادارے میسر ہوں جہاں وہ تعلیم حاصل کر کے علاقے کی خدمت کیساتھ ساتھ روزگار کا حصول انہیں آسانی سے میسر ہو۔ یہ بات وزیر اعلی گلگت بلتستان خالد خورشید خان نے یونیورسٹی آف لاہور کی جانب سے انہیں دی جانے والی ایک بریفنگ میں کہی۔

وزیر اعلی گلگت بلتستان نے کہا کہ ان کی ترجیحات میں سب سے پہلے پرائیویٹ سیکٹر میں ایک میڈیکل کالج اور hospitality management کے کالجوں کا قیام ہوگا کیونکہ ان دونوں شعبوں پہ وہ سمجھتے ہیں کہ شدید کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے یونیورسٹی انتظامیہ کو دعوت دی کہ وہ فوری طور پہ ان شعبوں میں گلگت بلتستان میں اپنے شاخ کھولے اور حکومت گلگت بلتستان ان کی کھل کے بھرپور مدد کرے گی کیونکہ ان کی حکومت کی اولین ترجیح لوگوں کو تعلیم اور روزگار کے وسیع مواقع فراہم کرنا ہے اور ان شعبوں میں تعلیم اداروں کے قیام سے ان کا خواب پورا ہو سکتا ہے

یونیورسٹی آف لاہور کے ریکٹر مجاہد کامران ، پرویکٹر ڈاکٹر زاہد نے وزیر اعلی گلگت بلتستان خالد خورشید خان سے تفصیلی گفتگو میں گلگت بلتستان میں ان دونوں شعبوں میں میڈیکل سکول اور hospitality management institute l کے قیام میں گہری دلچسپی کا اظہار کیساتھ سکردو میں ایک بڑے یونیورسٹی کے قیام میں بھی آمادگی ظاہر کی۔

یونیورسٹی آف لاہور کی جانب سے سلک روٹ یونیورسٹی کے قیام کے حوالے سے ایک جامع تجویز بھی جمع کروائی گئ۔ بعد ازاں وزیر اعلی گلگت بلتستان خالد خورشید خان نے یونیورسٹی آف لاہور کے زیر اہتمام چلنے والے ٹیچنگ ھسپتال کا بھی دورہ کیا جہاں پہ انہیں میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر سکندر اور سرجن ڈاکٹر آیاز خان نے انہیں تفصیلی بریفنگ دی

شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں